غسل کے وجوب اور کیفیت کے بارے میں جاہل شخص کا روزہ

حضرت آیة اللہ العظمی سید علی خامنہ ای
حضرت آیة اللہ العظمی سید علی خامنہ ای

غسل کے وجوب اور کیفیت کے بارے میں جاہل شخص کا روزہ

 

124. جو شخص سن بلوغ تک پہنچا ہو لیکن غسل واجب ہونے کے بارے میں یا غسل کیسے کیا جاتا ہے اس بارے میں  کوئی علم نہ ہو اور تقریبا دس سال گزرنے کے بعد تقلید اورغسل واجب ہونے کے بارے میں متوجہ ہوجائے تو اسکا کیا حکم ہے؟ اور قضا نمازوں اور روزوں کے بارے میں ان کا وظیفہ کیا ہے؟

ج۔ جنابت کی حالت میں جو نمازیں پڑھی ہیں انکی قضا واجب ہےاور اسی طرح ان روزوں کی بھی قضا واجب ہے جب وہ جنب ہونے کو تو جانتا تھا لیکن روزہ رکھنے کے لئے مجنب پر غسل واجب ہونے کو نہیں جانتا تھا.

 

منبع: سائیٹ ہدانا نے آیت اللہ العظمی حضرت آیة اللہ العظمی خامنہ ای کے استفتائات سے اخذ کیا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.