ماہ رمضان کی رات میں احتلام میں شک ہونا

حضرت آیة اللہ العظمی سید علی خامنہ ای
حضرت آیة اللہ العظمی سید علی خامنہ ای

ماہ رمضان کی رات میں احتلام میں شک ہونا

 

114. اگر مکلف ماہ  رمضان میں فجر سے پہلے  احتلام ہونے میں شک کرے اور اپنی شک کو اہمیت نہ دیتے ہوئے دوبارہ سوجائے اذان صبح کے بعد جب اٹھے تو  معلوم  ہوا کہ اذان سے پہلے محتلم ہوا تھا تو اس کے روزہ کا کیا حکم ہے؟

ج۔  اگر پہلی مرتبہ اٹھنے کے بعد احتلام  کے آثار نظر نہ آئےاور کوئی چیز واضح نہیں ہوئی  اور صرف  احتلام ہونے کا احتمال تھا اور اذان کے بعد  تک سوتا رہےتو ایسی صورت میں روزہ صحیح ہے گرچہ  بعد میں یہ ثابت کیوں نہ ہو جائے کہ اذان سے قبل محتلم ہوا تھا.

 

منبع: سائیٹ ہدانا نے آیت اللہ العظمی حضرت آیة اللہ العظمی خامنہ ای کے استفتائات سے اخذ کیا

🔗 لینک کوتاه

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.