سانس کی تنگی میں اسپرے سے استفادہ

حضرت آیة اللہ العظمی سید علی خامنہ ای
حضرت آیة اللہ العظمی سید علی خامنہ ای

سانس کی تنگی میں اسپرے سے استفادہ:

 

186. تنگی نفس میں مبتلا افراد کے لئے ایسی طبی دوا موجود ہے جو ایک ڈبے میں کمپریسڈ مائع کی شکل میں  موجود ہے اس مائع دوا  کو دبانے سے گیس پوڈر  مادہ کی شکل میں   بیمار انسان کے منہ کے ذریعہ اس کے پھیپھڑوں میں  پہنہچتا ہے جو بیمار کی تسکین اور آرام   کا موجب بنتا ہے کبھی بیمار دن میں اس سے کئی بار استفادہ کرنے پر مجبور ہوتا ہے کیا اس دوا کے استعمال کے باوجود روزہ رکھنا صحیح ہے؟ اس بات کے پیش نظر کہ اس کے استعمال کے بغیر روزہ رکھنا ناممکن یا بہت سخت ہوگا۔

ج۔  اگر مذکورہ وسیلہ سے صرف سانس کی راہ کھولنے کے لئے استفادہ کیا جاتا ہے تو وہ مبطل روزہ نہیں ہے۔

 

منبع: سائیٹ ہدانا نے آیت اللہ العظمی حضرت آیة اللہ العظمی خامنہ ای کے استفتائات سے اخذ کیا

🔗 لینک کوتاه

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.