ایک افق والے شہروں میں نئے چاند کا ثابت ہونا

ایک افق والے شہروں میں نئے چاند کا ثابت ہونا

 

 

حضرت آیة اللہ العظمی سید علی خامنہ ای
حضرت آیة اللہ العظمی سید علی خامنہ ای

ایک افق والے شہروں میں نئے چاند کا ثابت ہونا

 

27. اگر کسی شہر میں چاند نظر آئے تو کیا دوسرے ایسے شہر میں جو افق کے لحاظ سے متحد ہو یا دو گھنٹے فرق ہو , اس میں بھی مہینے کی پہلی تاریخ ثابت ہوگی؟

ج۔ اگر دونوں شہروں کے درمیان رویت ہلال کے امکان کا تلازم پایا جائے تو دوسرے شہروں کے لئے بھی کافی ہے  اور صرف غروب کا وقت فرق ہونا معیار نہیں ہے.

 

منبع: سائیٹ ہدانا نے آیت اللہ العظمی حضرت آیة اللہ العظمی خامنہ ای کے استفتائات سے اخذ کیا

[Total: 0    Average: 0/5]

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.